سپریم کورٹ میں فدا حسین (ٹورزم منسٹر گلگت بلتستان) کی اسلام آباد ائر پورٹ پر عملے کے ساتھ بدتمیزی کیس کی سماعت

سپریم کورٹ آف پاکستان میں آج ٹورزم منسٹر فدا حسین کی 16 نومبر کو اسلام آباد ائر پورٹ پر فلائٹ کینسل ہونے پر عملے کے ساتھ بد تمیزی کیس کی سماعت ہوئی،
16نومبر کو پی آئی اے کے فلائٹ کینسل ہونے پر فداحسین جو کہ ٹورزم منسٹر ہے نے اسلام آباد ائر پورٹ پر ایک پی آئی اے کےافسر کا گریبان پکڑا تھا.جس کا وڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد چیف جسٹس آف پاکستان جناب ثاقب نثار صاحب نے سو موٹو ایکشن لیا تھا، جس کی سماعت آج سپریم کورٹ میں ہوئی،
سماعت چیف جسٹس کے سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کیا.
چیف جسٹس جناب ثاقب نثار نے ٹورزم منسٹر سے سوال کیا، کیا آب نے ائر پورٹ سٹاف کو دھکا دیا تھا؟ آب ایجوکیٹڈ ہو؟
?Were you in your senses at the time
فداحسین نے اپنی غلطی تسلیم کیا اور چیف جسٹس سے کی معافی مانگی، جس کے بعد کیس کو ختم کر دیا گیا.

اپنا تبصرہ بھیجیں